حلقے میں رسولوں کے وہ ماہِ مدنی ہے

islamkidunya
HALKE MEIN RASOOLON KE WO MAHE MADNI HAI

نعت رسول کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم – حلقے میں رسولوں کے وہ ماہِ مدنی ہے

HALKE MEIN RASOOLON KE WO MAHE MADNI HAI

اَللّٰھُمَّ صَلِّ عَلٰی مُحَمَّدٍ وَّعَلٰٓی اٰلِ مُحَمَّدٍ کَمَا صَلَّیْتَ عَلٰٓی اِبْرَاھِیْمَ وَعَلٰٓی اٰلِ اِبْرَاھِیْمَ اِنَّکَ حَمِیْدٌ مَّجِیْدٌ

اَللّٰھُمَّ بَارِکْ عَلٰی مُحَمَّدٍ وَّعَلٰٓی اٰلِ مُحَمَّدٍ کَمَا بَارَکْتَ عَلٰٓی اِبْرَاھِیْمَ وَعَلٰٓی اٰلِ اِبْرَاھِیْمَ اِنَّکَ حَمِیْدٌ مَّجِیْدٌ

حلقے میں رسولوں کے وہ ماہِ مدنی ہے

کیا چاند کی تنویر ستاروں میں چھنی ہے

کہدے میرے عیسٰی سے مدینے میں یہ کوئی

اب جان پہ بیمارِ مَحَبّت کے بنی ہے

محبوب کو بے دیکھے ہوئے لوٹ رہے ہیں

عشّاق میں کیا رنگِ اویسِ قرنی ہے

گھر سے کہیں اچھا ہے مدینے کا مسافر

یاں صبحِ وطن شامِ غریب الوطنی ہے

معراج میں حوروں نے جو دیکھا تو یہ بولیں

کس نوک پلک کا یہ جوانِ مدنی ہے

اِک عمر سے جلتا ہے مگر جل نہیں چکتا

کس شمع کا پروانہ اویسِ قرنی ہے

عشاق سے پوچھے نہ گئے حشر میں اعمال

کیا بگڑی ہوئی بات مَحَبّت سے بنی ہے

یاد احمدِ مختار کی ہے کعبہِ دل میں

مکے میں عیاں جلوہِ ماہِ مدنی ہے

کس شوق سے جاتے ہیں مدینے کے مسافر

محبوب وطن سے کہیں یہ بے وطنی ہے

کہتا ہے مسافر سے یہ ہر نخلِ مدینہ

آرام ذرا لے لو یہاں چھاؤں گھنی ہے

آغوشِ تصور میں بھی آنا نہیں ممکن

حوروں سے بھی بڑھ کر تری نازکبدنی ہے

اللہ کے محبوب سے ہے عشق کا دعوٰی

بندوں کا بھی کیا حوصلہ اللہ غنی ہے

آنکھوں سے ٹپکتا ہے مری رنگِ اویسی

جو لختِ جگر ہے وہ عقیقِ یمنی ہے

میں اس کے غلاموں میں ہوں جو سب کا ہے آقا

سردارِ رسل سیّدِ مکی مدنی ہے

اعدا نے جہاں مانگی اماں رُک گئی چل کر

شمشیرِ حُسینی میں بھی خلقِ حَسَنی ہے

ہر دل میں ہے محبوبِ الٰہی کی تجلی

ہر آئینے میں عکسِ جمالِ مدنی ہے

مقتل ہے چمن نعش پہ حوروں کا ہے مجمع

کیا رنگ میں ڈوبی مری خونیں کفنی ہے

پہنچی ہیں کہاں آہیں اویسِ قرنی کی

باغوں میں مدینے کے ہوائے یمنی ہے

کچھ مدح پڑھوں روضہِ پُر نُور پہ چلکر

یہ بات امیؔر اب تو مرے دل میں ٹھنی ہے

اے سبز گنبد والے منظور دعا کرنا

اے صبا مصطفٰی سے کہہ دینا غم کے مارے سلام کہتے ہیں

صبح طیبہ میں ہوئی بٹتا ہے باڑا نور کا

عرشِ حق ہے مسندِ رفعت رسولُ اللہ کی

Comments

Leave a Reply

Next Post

تم پر میں لاکھ جان سے قربان یا رسولﷺ

نعتِ رسولِ کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم – تم پر میں لاکھ جان سے قربان یا رسولﷺ TUM PAR MAIN LAKH JAAN SE QURBAN YA RASOOL (SALLA’LAHU ALAY’HI WA SALLAM) اَللّٰھُمَّ صَلِّ عَلٰی مُحَمَّدٍ وَّعَلٰٓی اٰلِ مُحَمَّدٍ کَمَا صَلَّیْتَ عَلٰٓی اِبْرَاھِیْمَ وَعَلٰٓی اٰلِ اِبْرَاھِیْمَ اِنَّکَ حَمِیْدٌ مَّجِیْدٌ اَللّٰھُمَّ بَارِکْ […]
TUM PAR MAIN LAKH JAAN SE QURBAN YA RASOOL (SALLA’LAHU ALAY’HI WA SALLAM)
%d bloggers like this: