Site icon ISLAM KI DUNYA

Hun Khaak Magar Alam e Anwar Se Nisbat Hai – Lyrics

Hun Khaak Magar Alam e Anwar Se Nisbat Hai - Lyrics

Hun Khaak Magar Alam e Anwar Se Nisbat Hai – Lyrics

ہوں خاک مگر عالم انوار سے نسبت ہے

Hun khaak magar alam e anwar se nisbat hai
Main kuchh bhi nahi lekin sarkar se nisbat hai

Main inka gada hun muje kya koi kharidega
Main sasta nahi aap ke bazaar se nisbat hai
Main kuchh bhi nahi lekin sarkar se nisbat hai

Main khaak ka putla hun wo arsh ke rahi hain
Main is paar ka basi hun us paar se nisbat hai
Main kuchh bhi nahi lekin sarkar se nisbat hai
 
Naamus e risalat pe ham jaan luta denge
Siddiko Umar jaise wafadaron se nisbat hai
Main kuchh bhi nahi lekin sarkar se nisbat hai
 
Sar jhuk nahi sakte sare mahshar bhi hamare
Sar is liye unche hain sardaar se nisbat hai
Main kuchh bhi nahi lekin sarkar se nisbat hai
 

ہوں خاک مگر عالم انوار سے نسبت ہے
میں کچھ بھی نہیں لیکن سرکارﷺ سے نسبت ہے

دنیا کی شہنشاہی کو رکھتا ہوں میں ٹھوکر پر
کونین کے اس مالک و مختار سے نسبت ہے

میں خاک کا پتلا ہوں وہ ﷺ عرش کے راہی ہیں
اس پا ر کا باسی ہوں اور اس پار سے نسبت ہے

سر جھک نہیں سکتے سر محشر بھی ہمارے
سر اس لیے اونچے ہیں کہ سردارﷺ سے نسبت ہے

سرکار ﷺ کے دامن سے الطاف ہوں وابستہ
ؑغم پاس بھی کیوں آئیں کہ غم خوار سے نسبت

 
 
Read More:

 

Hoon Khaak Magar Alam e Anwar Se – Qari Shahid Mehmood

hun khak magar || qari shahid mehmood || tarlai islamabad 2017

Comments
Exit mobile version