Site icon ISLAM KI DUNYA

نہ کہیں سے دُور ہیں مَنزلیں نہ کوئی قریب کی بات ہے

NA KAHIN SE DOOR HEIN MANZILEN NA KOI QARIB KI BAAT HAI

نعتِ رسولِ کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم – نہ کہیں سے دُور ہیں مَنزلیں نہ کوئی قریب کی بات ہے

NA KAHIN SE DOOR HEIN MANZILEN NA KOI QARIB KI BAAT HAI

نہ کہیں سے دُور ہیں مَنزلیں نہ کوئی قریب کی بات ہے

جسے چاہیں اُس کو نواز دیں یہ درِحبیبﷺ کی بات ہے

جسے چاہا دَر پہ بُلالیا ، جسے چاہا اپنا بنا لیا

یہ بڑے کرم کے ہیں فیصلے ، یہ بڑے نصیب کی بات ہے

وہ خدا نہیں ، بخدا نہیں، مگر وہ خدا سے جُدا نہیں

وہ ہیں کیا مگر وہ کیا نہیں یہ محب حبیبﷺ کی بات ہے

وہ مَچل کے راہ میں رہ گئی ، یہ تڑپ کے دَ ر سے لپٹ گئی

وہ کِسی امیر کی آہ تھی، یہ کِسی غریب کی بات ہے

تُجھے اے منوّرِ بے نوا درِ شاہ سے چاہئیے اور کیا

جو نصیب ہو کبھی سامنا تو بڑے نصیب کی بات ہے.

YouTube Poster

بھر دو جھولی میری یا محمد  لوٹ کر میںنہ جاوّں گا خالی 

بے خُود کِیے دیتے ہیں اَندازِ حِجَابَانَہ

پھر کے گلی گلی تباہ ٹھوکریں سب کی کھائے کیوں

پیغام صبا لائی ہے گلزار نبی سے

میں لب کشا نہیں ہوں اور محو التجا ہوں​

Comments
Exit mobile version