Site icon ISLAM KI DUNYA

تصور میں منظر عجیب آ رہا ہے

تصور میں منظر عجیب آ رہا ہے

نعتِ رسولِ کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم –  تصور میں منظر عجیب آ رہا ہے

Tassawur Mein Manzar Ajeeb Aa Raha Hai

اَللّٰھُمَّ صَلِّ عَلٰی مُحَمَّدٍ وَّعَلٰٓی اٰلِ مُحَمَّدٍ کَمَا صَلَّیْتَ عَلٰٓی اِبْرَاھِیْمَ وَعَلٰٓی اٰلِ اِبْرَاھِیْمَ اِنَّکَ حَمِیْدٌ مَّجِیْدٌ

اَللّٰھُمَّ بَارِکْ عَلٰی مُحَمَّدٍ وَّعَلٰٓی اٰلِ مُحَمَّدٍ کَمَا بَارَکْتَ عَلٰٓی اِبْرَاھِیْمَ وَعَلٰٓی اٰلِ اِبْرَاھِیْمَ اِنَّکَ حَمِیْدٌ مَّجِیْدٌ

تصور میں منظر عجیب آ رہا ہے

کہ جیسے وہ روضہ قریب آ رہا ہے

جسے دیکھ کر روح یہ کہہ رہی ہے

مرے درد دل کا طبیب آ رہا ہے

یہ کیا راز ہے مجھ کو کوئی بتائے

زباں پر جو اسم حبیب آ رہا ہے

الہی میں قربان تیرے کرم کے

مرے کام میرا نصیب آ رہا ہے

وہی اشک ہے حاصل زندگانی

جو ہر آنسو پہ یاد حبیبﷺ آ رہا ہے

جسے حاصل کیف کہتی ہے دنیا

خوشا اب وہ عالم قریب آ رہا ہے

جو بہزاد پہنچا تو دنیا کہے گی

در شاہ پر اک غریب آ رہا ہے

اُرْدُو نعت لیرکس

حاجیو! آؤ شہنشاہ کا روضہ دیکھو کعبہ تو دیکھ چکے کعبے کا کعبہ دیکھو

اپنی نسبت سے میں کچھ نہیں ہوں، اس کرم کی بدولت بڑا ہوں

اے صبا مصطفٰی سے کہہ دینا غم کے مارے سلام کہتے ہیں

فاصلوں کو تکلف ہے ہم سے اگر ، ہم بھی بے بس نہیں ، بے سہارا نہیں

مولاي صلــــي وسلــــم دائمـــاً أبــــدا – قصیدہ بردہ شریف

Comments
Exit mobile version